براؤزنگ بلاگز

بلاگز

علامہ اقبال، مسئلہ فلسطین اور یہودیت

ڈاکٹر عمیر ہارون آج ہمارے بعض دانشور اسرائیل کی حمایت میں تمام حدیں عبور کیے ہوئے ہیں، مظلوم فلسطینیوں کے مصائب و آلام کو نظرانداز کرتے ہوئے وہ اسرائیل کو تسلیم کرنے کے ضمن میں دُور کی کوڑیاں لانے اور ایک دوسرے پر بازی لے جانے میں پیش

خصوصی افراد، معاشرے کا قابل قدر حصّہ!

محمد راحیل وارثی دوران سفر سگنل پر ایسے شخص نے بھیک طلب کی جو ہاتھ پیر سلامت ہونے کے ساتھ دماغی طور پر بھی بہتر معلوم ہوتا تھا۔ میں اُسے نظرانداز کرتے ہوئے سگنل کھلنے کا منتظر تھا کہ اُس نے دوبارہ تقاضا کیا۔ اس بار اُسے نصیحت کرنے کی

ایک قدآور دبدبہ

وہ لاہور کی ایک خاموش صبح تھی، جب ایک پنچ ستارہ ہوٹل کے پارکنگ ایریا میں ایک ٹیکسی آن کر رُکی۔اور اس میں سے ایک بوڑھا، لمبا چوڑا آدمی، جس نے ٹراؤز پہن رکھا تھا، اور اوپر ٹی شرٹ تھی، جس پر کوٹ چڑھا تھا، نیچے اترا۔اس کے ہاتھ میں چھڑی تھی۔

قومی ترانے کے خالق حفیظ جالندھری کی برسی

محمد راحیل وارثی آج قومی ترانے کے خالق ابوالاثر حفیظ جالندھری کی برسی ہے۔ 21 دسمبر 1982 کو لاہور میں آپ کا انتقال ہوا۔ آپ ملک عزیز کے معروف ترین شعرا میں سے ایک تھے۔ حب الوطنی کا جذبہ آپ میں کوٹ کوٹ کر بھرا ہوا تھا۔ آپ کی ملک و قوم کے

مت سمجھو ہم نے بھلا دیا "سانحہ اے پی ایس”

پاکستان کی تاریخ کا سیاہ ترین دن جو ہر سال 16 دسمبر کو ان معصوم اور بے گناہ بچوں کی یاد دلاتا ہے جو گھر سے اسکول تعلیم حاصل کرنے گئے تھے وہ نہیں جانتے تھے کہ انکی کتابیں اور انکا جسم لہو میں ڈوب جائے گا۔ مجھے آج بھی سانحہ آرمی پبلک کا

سانحۂ اے پی ایس، لفظ بھی گریہ کرتے ہیں!

محمد راحیل وارثی سانحہ اے پی ایس پر لکھتے ہوئے راقم کے ساتھ لفظ بھی روتے ہیں۔ وہ پھول جو ابھی پوری طرح کِھلے اور نہ مہکے تھے۔ وہ پھول جو ابھی بہار کے منتظر تھے اور جن کا پنپنا باقی تھا۔ وہ معصوم پھول آج سے 6 برس قبل بزدل دُشمن کی درندگی

نامور ادیب پطرس بخاری کی 62 ویں برسی

محمد راحیل وارثی اردو ادب کو اپنی تحریروں کے ذریعے معطر کرنے والے پطرس بخاری کی آج 62 ویں برسی منائی جارہی ہے۔ 5 دسمبر 1958 کو نیویارک (امریکا) میں آپ کا انتقال ہوا تھا۔ آپ کی وفات کو اتنے برس بیت جانے کے باوجود آج بھی آپ کے قارئین اور

سندھی کلچرل ڈے

فرحین اقبال کلچر انسان کی تخلیقی سوچ کا اظہار ہے۔۔۔۔یہ معاشرے کی اجتماعی شناخت ہے۔۔۔ اس سے مرادکسی تصویر یا ذات کی ذہنی اور جسمانی نشو و نما ہے۔مختلف قومیں،مختلف ثقافتوں کی حامل ہوتی ہیں، البتہ ہر ثقافت پر دیگر ثقافتوں کا تھوڑا بہت اثر

ڈیگو:جادوئی میدانوں کا فسوں گر رخصت ہوا!

جب تک فٹ بال کا کھیل زندہ ہے، میراڈونا کا نام زندہ رہے گا اقبال خورشید سن 86 کے دو مناظر میرے ذہن میں محفوظ ہیں۔یوں، جیسے کل ہی مجھ پر بیتے ہوں۔ایک منظر قصبہ علی گڑھ کے فسادات کا ہے۔ اوردوسرا؛ ڈیگو کی دمکتی مسکراہٹ کا۔پہلے منظرمیں

میر ظفر اللہ جمالی کی رحلت

چوہدری اُسامہ سعید سیاست سے اعلیٰ اخلاقی اقدار رخصت ہوتی چلی جارہی ہیں۔ اچھے سیاست دان بھی اب ہم سے دُور ہوتے چلے جارہے ہیں۔ پچھلے دنوں سابق وزیراعظم میر ظفر اللہ جمالی وفات پاگئے۔ وہ اے ایف آئی سی ہسپتال راولپنڈی میں زیرعلاج تھے۔ ان کی